کیون پیٹرسن کی شاندار بلے بازی

kevin pietersenتیسرے ٹیسٹ میں انگلینڈ کی ٹیم مشکلات کا شکار
اسٹریلوی فاسٹ بالرز کی عمدہ بالنگ ،کیون پیٹرسن کی شاندار سینچری، آئن بیل کی ذمہ دارانہ اننگز۔ میچ دلچسپ مرحلے میں داخل۔
کیون پیٹرسن جو حالیہ ایشز سیریزمیں کوئی قابلِ ذکر اننگز نہیں کھیل سکے تھے، نے 113 رنز کی شاندار باری کھیلی جب انگلش ٹیم کو رنز کی شدید ضرور ت تھی۔ اس سے پہلے اسٹریلیا کی ٹیم ، جو سیریز کے پہلے دو میچ ہارچکی ہے، نے کھیل کے دوسرے دن چائے کے وقفے کے بعد سات وکٹوں کے نقصان پر 527 رنز بنا کر اننگز ختم کرنے کا اعلان کیا تھا۔ اس کے جواب میں انگلینڈ کی ٹیم شروع سے ہی مشکلات کا شکار ہو گئی جب ایک سو دس کے سکور پر اس کے چار کھلاڑی آؤٹ ہوچکے تھے اور اس کوفالواُن سے بچنے کے لیے مزید دو سو سترہ رنز درکار تھے۔ اس موقع پر آئن بیل ، جو کہ گزشتہ نو ایشز میچوں میں آٹھ نصف سینچریاں سکور کرچکے ہیں، اور کیون پیٹرسن نے ٹیم کو سنبھالا دیا۔ بیل نے حسبِ دستور محتاط انداز جبکہ پیٹرسن نے جارحانہ انداز میں کھیلتے ہوئے ٹیم کو مشکلات سے نکالنے کی کوشش کی۔
اسی دوران پیٹرسن نے اسٹریلوی سپنر ناتھن لائن کو لگاتار دو چھکے لگاتے ہوئے اپنی نصف سینچری سکور کی۔
مچل سٹارک ، جو بہت اچھی بالنگ کررہے تھے، کی ایک اٹھتی ہوئی گیند پر اپر کٹ لگاتے ہوئے کیون پیٹرسن نے اپنی تیسویں سینچری مکمل کی۔ یہ سینچری اُنھوں نے 165 بال کھیل کر دس چوکوں اوردوچھکوں کی مدد سے سکور کی۔
جب تیسرے دن کا کھیل ختم ہوا تو انگلینڈ کی ٹیم نے سات وکٹوں کے نقصان پر 294 رنز بنائے تھے۔ میٹ پرائر اور سٹیورٹ براڈ کریز پر ہیں جبکہ فالوآن سے بچنے کے لیے اب صرف 34رنز درکار ہیں۔ اگر اسٹریلیا صبح وکٹ کی نمی سے فائدہ اٹھاتے ہوئے جلدی وکٹیں لینے میں کامیاب ہو گیا تو پھر یہ ٹیسٹ سنسنی خیز مرحلے میں داخل ہو جائے گا۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *