روس اور کینیڈا کے درمیان ایسی چیز کی دریافت کہ سائنسدان بھی دنگ رہ گئے!

مائع لوہے کا جیٹ اسٹریم 420 کلومیٹر وسیع ہے جو ہر سال 40 کلومیٹر فاصلہ طے کررہا ہے۔
فوٹو: بشکریہ نیوسائنٹسٹ

لندن -ماہرین نے زمینی مقناطیسی میدان پر تحقیق کے دوران دریافت کیا ہے کہ روسی علاقے سائبیریا اور کینیڈا کے درمیان ایک بہت وسیع ذخیرہ مائع فولاد کا موجود ہے جسے مائع فولاد کا جیٹ اسٹریم کہا گیا ہے اور وہ ہر سال 40 سے 45 کلومیٹر کی رفتار سے سفر کررہا ہے۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ اس ذخیرے کی رفتار زمینی بیرونی قلب (آؤٹر کور) کے مقابلے میں تین گنا زائد ہے لیکن ماہرین اس کی وجہ جاننے سے قاصر ہیں۔ ماہرین کا خیال ہے کہ یہ ایک قدیم مظہر ہے جو ایک ارب سال یا اس سے بھی پرانا ہوسکتا ہے۔ اس کے مطالعے سے زمین کے قدرتی مقناطیسی میدان کو جاننے اور سمجھنے میں بھی مدد مل سکتی ہے۔

برطانیہ میں یونیورسٹی آف لیڈز کے ماہرین کے مطابق یہ ایک حیرت انگیز دریافت ہے۔ یہ ایک مائع پھوار کی صورت میں حرکت کررہا ہے۔ ایک اور سائنسدان کے مطابق اس اہم انکشاف سے خود زمین کے اندرونی ماحول کو جاننے میں مدد ملے گی۔ فولادی مائع کے اس بڑے ذخیرے کو یورپی خلائی ایجنسی کے سیٹلائٹ اور دیگر اسٹیشنوں کی مدد سے دریافت کیا گیا ہے کیونکہ اس کی حرکت زمینی مقناطیسی میدان میں تبدیلی پیدا کررہی ہے :-

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *