دھاندلی کی تحقیقات: انکوائری کمیشن میں خفیہ ایجنسیوں کو شامل کیا جائے، عمران خان

imran.khanپاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ گذشتہ انتخابات میں دھاندلی کی تحقیقات کے لیے سپریم کورٹ کی نگرانی میں ایک غیر جانبدار کمیشن تشکیل دے جس میں خفیہ ایجنسی کے لوگ بھی شامل ہوں ۔
عمران خان نے وزیراعظم پاکستان میاں نواز شریف کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کو وہ سپریم کورٹ کے تحت ایک کمیشن تشکیل دیں جس میں آئی ایس آئی اور ایم آئی کے لوگ موجود ہوں اور یہ کمیشن چار سے چھ ہفتوں میں اپنی رپورٹ پیش کرے کہ دو ہزار تیرہ کے اِنتخابات میں ہونے والی دھاندلی کی تحقیقات کرے۔ان کا کہنا تھا کہ جب تک کمیشن اپنی تحقیقات مکمل نہیں کر لیتا تب تک نواز شریف نہ استعفی دیں اور نہ ہی وہ دھرنا ختم کریں گے۔ انھوں نے کہا کہ کمیشن کے سربراہ کی تعیناتی تحریک انصاف سے مشاروت سے کی جائے۔عمران خان نے کہا کہ اگر کمیشن کی رپورٹ میں یہ ثابت ہو گیا کہ انتخابات میں دھاندلی ہوئی ہے تو اُنہیں مستعفی ہو کر نئے اِنتخابات کروانےہوں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ اگر دوبارہ الیکشن ہو گا تو نئے الیکشن کمیشن کی موجودگی میں ہونا چاہیے اور چاروں صوبائی الیکشن کمشنرز کو استعفی دینا چاہیے۔
رحیم یار خان میں ایک عوامی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے عدلیہ کی غیر جانبداری پر بھی سوالات اٹھاتے ہوئے انہوں نے کہا کہ عدلیہ کی بحالی کی تحریک کے ذریعے عدلیہ آزاد تو ہوگئی ہے لیکن ابھی تک غیر جانبدار نہیں ہوسکی ہے۔انہوں نے کہا کہ عدلیہ کی آزادی کے لیے عوام اور وکلا سڑکوں پر آئے انھوں نے بھی جیل کاٹی، کراچی میں پچاس لوگ ہلاک ہوئے لیکن افسوس سے کہنا پڑتا ہے کہ عدلیہ اس جدوجہد میں آزاد ہوگئی لیکن غیر جانبدار نہیں ہو سکی ہے

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *