پانی میں ڈوبی کار سے انجینئر مظفر کی اہلیہ اور بچے کی لاش برآمد

کراچی انتظامیہ کی غفلت کی وجہ سے خاندان المناک حادثے کا شکار۔
حالیہ بارشوں نے کراچی کی سڑکوں کو ندی نالوں میں تبدیل کرکے شہری انتظامیہ کے دعووں کی قلعی کھول دی تھی۔ یہ بدقسمت خاندان بارش کے پانی میں پھنس گیا اور ان کی کار بہاؤ کے باعث ایک نالے میں جا گری۔ تین دن تک کراچی کے ناخدا غفلت کی نیند سوتے رہے ۔ آخر کار پاک بحریہ کے غوطے خوروں نے کار کا سراغ لگایا اور سخت محنت کے بعد اسے باہر نکلا۔ اس میں باسمین اور اس کے معصوم بچے کی لاشیں تھیں جنہیں نارتھ کراچی کے محمد شاہ قبرستان میں دفن کر دیا گیا ہے۔نمازِ جنازہ اور تدفین کے موقع پر ایم کیو ایم کی رابطہ کمیٹی کے اراکین، ارکانِ اسمبلی اور شہریوں کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کی۔ اس موقع پر ہر آنکھ اشک بار تھی۔ انجینئر مظفر کی لاش تاحال نہیں ملی ہے۔ امید ہے کہ آج ، بروز بدھ، لاش کی تلاش کا کام کیا جائے گا۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *