نئی دہلی میں کانگرس کے یوتھ ونگ کا پاکستانی ھائی کمیشن پر حملہ

نئی دہلی میں کانگرس یوتھ ونگ کے کارکنوں نے احتجاج کے دوران مشتعل ہوکر پاکستانی ھائی کمیشن پر حملہ کردیا۔
ابتدائی اطلاعات کے مطابق کانگرس کے کارکن پانچ بھارتی فوجیوں کی ہلاکت کے خلا ف احتجاج کررہے تھے۔ اُن کا کہنا تھا کہ لائن آف کنٹرول پر پاکستانی فورسز نے فائرنگ کی جس کے نتیجے میں پانچ فوجی ہلاک ہو گئے۔ مشتعل مظاہرین نے پاکستانی سفارت خانے کے اندر داخل ہونے کی بھی کوشش کی۔ صورتِ حال اُس وقت خراب ہوگئی جب پولیس نے اُنہیں روکنے کی کوشش کی۔ اس کے نتیجے میں مظاہرین نے ہنگامہ آرائی شروع کردی۔ اس پر پولیس نے اُنہیں منتشر کرنے کے لیے پانی کی توپ استعمال کی۔
مظاہرین نے پاکستان کے خلاف نعرے لگائے اور انڈین وزیرِ اعظم من موہن سنگھ پر زور دیا کہ وہ اپنے پاکستانی ہم منصب سے ملاقات منسوخ کردیں۔ بھارتی میڈیا کے مطابق بی جے پی کے ایک وفد نے بھی وزیرِ اعظم سے ملاقات کرتے ہوئے اُنہیں قائل کرنے کی کوشش کی ہے کہ وہ پاکستانی وزیرِ اعظم مسٹر نواز شریف سے ملاقات کا ارادہ تر ک کردیں۔
پاکستانی وزیر اعظم اور ان کے بھارتی ہم منصب کی یو این کی جنرل اسمبلی کے ستمبر میں ہونے والے اجلاس کے دوران ملاقات کا امکان پایا جاتاہے۔ اب جبکہ بھارتی دائیں بازو کے گروہ اس ملاقات کو سبوتاژ کرنا چاہتے ہیں، کانگرس کے ترجمان کا کہنا ہے کہ یہ ملاقات منسوخ نہیں کی جائے گی۔ بھارتی وزیرِ خارجہ مسٹر سلمان خورشید کا کہنا ہے کہ فائرنگ کے واقعے کی پاکستان سے وضاحت طلب کی جائے گی اور پھر اس تمام صورتِ حال کو پارلیمنٹ کے سامنے رکھا جائے گا۔
اس سے پہلے دونوں ممالک کے ڈائریکٹر جنرل آف ملٹری اپریشنز نے بھی ھاٹ لائن پر رابطہ کرتے ہوئے لائن آف کنٹرول کی صورتِ حال پر بات چیت کی۔ پاکستان نے لائن آف کنٹرول پر بھارتی فائرنگ کی زد میں آکردوفوجیوں کے زخمی ہونے پر احتجاج کیا۔ پاکستان کا موقف ہے کہ اس کی فورسز نے فائرنگ نہیں کی اور پانچ فوجیوں کی ہلاکت کا بھارتی الزام بے بنیاد ہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *