جس دن شریف برادران گرفتار ہونگے، میں بھی گرفتاری دے دوں گا، طاہر القادری

qadriپاکستان عوامی تحریک  کے قائد ڈاکٹر طاہر القادری کا کہنا ہے کہ جس دن وزیراعظم نواز شریف اور وزیرِاعلیٰ پنجاب شہباز شریف گرفتار ہوئے، اس دن خود گرفتاری دے دوں گا۔
وطن آمد کے بعد لاہور میں اپنی رہائش گاہ کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹر طاہر القادری کا کہنا تھا کہ حکومت میں ہمت ہے تو مجھے گرفتارکرلے۔
سانحہ ماڈل ٹاؤن پر بنائی گئی جوائنٹ انوسٹی گیشن ٹیم کو مسترد کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ وہ جے آئی ٹی کو انصاف کا قتل سمجھتے ہیں۔انھون نے کہا کہ 23 جون کو جب میری پاکستان آمد ہوئی تھی تواس دن کارکنوں کا خون ہوا تھا اور آج انصاف کا خون ہوا ہے۔طاہر القادری نے کہا کہ دھرنے کے دوران جتنے مذاکرات ہوئے،جن اصولوں پر حکومت نے زبانی طور پر اتفاق کرلیا تھا، اس کی بھی صریح خلاف ورزی ہوئی ہے اوروہ ہر چیز سے مکر گئے ہیں۔
ان کا کہنا تھا کہ جرگہ کی تجاویز کے مطابق جے آئی ٹی میں پنجاب کو شامل نہیں کیا جائے گا، جبکہ ہماری تجویز تھی کہ جے آئی ٹی صوبہ خیبر پختونخوا کے لوگوں پرمشتمل ہو، کیوں کہ اس صوبے پر وفاقی حکومت کا عمل دخل نہیں ہے۔ہماری شرط تھی کہ جے آئی ٹی میں پنجاب پولیس کا افسر قبول نہیں کیا جائے گا، کیوں کہ پنجاب پولیس سانحہ ماڈل ٹاؤن میں قاتل ہے،قاتل خود اپنی تفتیش کیسے کرسکتا ہے؟طاہرالقادری کا کہنا تھا کہ ہم متاثرہ فریق ہیں کیونکہ ہمارےلوگ شہید ہوئے اور 12 گھنٹے ہونے والی قتل وغارت کی رپورٹ ہمیں دی جانی چاہیےتھی۔انھوں نے سوال کیا کہ بتایا جائے جےآئی ٹی کی رپورٹ کوکیوں چھپایا گیا۔رپورٹ چھپانا اس بات کا ثبوت ہےکہ حکمران قاتل اورمجرم قرارپاچکے، لیکن ایسے اوچھے ہتھکنڈوں اور انصاف کے قتل سے وہ کبھی بری نہیں ہوں گے۔
طاہر القادری نے میڈیا کے بھرپور تعاون کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ کون گولیاں چلارہا ہے اور کون قاتل ہے، سب دنیا کےسامنے ہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *