بھارت الزام تراشی کا سلسلہ بند کرے ...چوہدری نثار

وفاقی وزیرِ داخلہ چوہدری نثار علی خاں نے کہا ہے کہ بھارت کو اپنے داخلی مسائل اور کمزوریوں کا الزام پاک فوج پر ڈالنے کی پالیسی سے گریز کرنا چاہیے۔ اُنھوں نے سوال اٹھایا کہ یہ کس طرح ممکن ہے کہ پاکستانی فوجی دستے کنٹرول لائن عبور کرتے ہوئے بھارتی علاقے میں پانچ کلو میٹر تک داخل ہوجائیں اور اُن کے فوجیوں کو ہلاک کردیں جبکہ کنٹرول لائن پر بھارت نے خاردار تار لگا رکھی ہے اور بھارتی بارڈر سیکورٹی فورسز بھی الرٹ رہ کر ہمہ وقت نگرانی کرتی ہیں۔ وہاں عملاً پرندہ بھی پر نہیں مار سکتا۔
اس سے پہلے بھارت نے الزام لگایا تھاکہ پاکستانی افواج کی فائرنگ سے اس کے پانچ فوجی ہلاک ہو گئے ہیں۔ اس پر بھارت نے پاکستان سے شدید احتجاج بھی کیا ۔ بدھ کو نئی دہلی میں کانگرس کی طرف سے ایک مظاہرہ بھی کیا گیا۔ مظاہرین نے پاکستانی ھائی کمیشن پر دھاوا بول دیا اور اندر داخل ہونے کی کوشش کی۔ اس پر بھارتی پولیس نے اُنہیں منتشر کرنے کے لیے واٹر گن استعمال کی۔
چوہدری صاحب نے کہا کہ ہر معاملے پر پاک فوج پر الزام لگانا بھارتی وطیرہ بن چکا ہے۔ یہ سیاسی پراپگنڈے کے سوا کچھ نہیں ہے۔ کچھ مبصرین کا یہ بھی کہنا ہے کہ چونکہ بھارتی میں بھی انتخابات کی فضا بن رہی ہے ، اس لیے بعض سیاسی جماعتیں پوائنٹ اسکورنگ کے لیے ایسے ہتھکنڈے تلاش کرتی رہتی ہیں۔فوجیوں کی ہلاکت کے معاملے پر دو نوں ممالک کے ڈی جی ملٹر اپریشنز کے درمیان ھاٹ لائن پر رابطہ ہوا ہے۔ امریکہ نے بھی سرحد پر بڑھتی ہوئی کشیدگی پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔
چوہدری نثار کا کہنا تھاکہ پاکستان ایک پر امن ملک ہے اور یہ خطے میں پائیدار امن کا خواہاں ہے۔ تاہم پاکستان کی امن کی خواہش کو کمزوری نہیں سمجھنا چاہیے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *