جرمنی میں افغان طالبعلم کی گرفتاری پر ساتھی طلبا نے تاریخ رقم کردی!

برلن -دنیا بھر میں جہاں پر انسانیت سوز واقعات سامنے آرہے ہیں مگروہیں کچھ ایسے واقعات بھی سامنے آتے ہیں جو ایسے واقعات پر مرہم کے طور ظاہر ہوتے ہیں اور ایسا ہی کچھ جرمنی میں ہوا جہاں ایک طالب علم کی بے دخلی کےخلاف سینکڑوں افراد سڑکوں پر نکل آئے اور پولیس کے ساتھ شدید جھڑپیں کیں۔

تفصیلات کے مطابق میں جرمنی میں سیاسی پناہ کے منتظر ایک طالب علم کو بے دخل کرنے کے لئے جب جرمن پولیس مقامی کالج پہنچی تو افغان طالب علم کے 20کے قریبی ساتھی طلبہ و طالبات نے پولیس کو روک لیا اور طالب علم کو گرفتار نہ کرنے کی اپیل کی لیکن پولیس اپنی ضد پر اڑی رہے اور طالب علم کو لئے بنا جانے سے انکار کیا، اس کے بعد طلبہ و طالبات اشتعال میں آگئے اور طالب علم کو پولیس کے حوالے کرنے سے انکار کردیا ۔افغان طالب علم کی گرفتار ی کے خلاف طلبہ وطالبات نے سڑک کو بلاک کر کے دھرنا دے دیا جبکہ ان کے دھرنے میں بعدازاں مقامی افراد بھی شامل ہوگئے۔پولیس نے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لئے لاٹھی چارج اور مرچوں کے سپرے کے علاوہ دیگر روایتی حربے استعمال کئے مگر وہ مظاہرین کو منتشر کرنے میں ناکام رہی ، مظاہرین نے کئی گھنٹے تک مرکزی شاہراہ کو بند رکھا اور بعد ازاں پولیس اور مقامی انتظامیہ کو مظاہرین کے سامنے گھٹنا ٹیکنے پر مجبور کردیا اورحراست میں لئے گئے افغان طالب علم کو رہا کردیا :-

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *