عمران خان میچ فکسنگ میں ملوث رہے، پی ایم ایل این کے میڈیا کوارڈینیٹر کا دعویٰ

rr

پاکستان مسلم لیگ نواز کے میڈیا کوآرڈی نیٹر محمد مہدی نے دعوی کیا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان اپنے کرکٹ کیریر کےد وران میچ فکسنگ میں ملوث رہے ہیں۔ ہفتہ کے روز میڈیا سینٹر میں گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے انکشاف کیا کہ عمران خان نے پاکستان کے قومی مفاد کو داو پر لگا کر کیری پیکر سے بے شمار رقوم حاصل کیں۔ یہ واقعہ 1983 کے ورلڈ کپ کے دوران پیش آیا۔ پیکر ایک آسٹریلین میڈیا ٹائیکون تھے جنہوں نے 1977 میں آسٹریلین، انگلش، پاکستانی، ساوتھ افریقن اور ویسٹ انڈین پلیرز کے ساتھ معاہدے کر کے اپنی کرکٹ سیریز منعقد کی۔مہدی نے بتایا کہ عمران خان نے لندن کا متنازعہ فلیٹ بھی 1983 میں ہی خریدا تھا۔ تب عمران خان نے اہم موقع پر باولنگ سے انکار کر دیا اور پاکستان میچ ہار گیا۔ مہدی نے اس الزام کے بعد عمران خان کے باولنگ نہ کرنے کے فیصلے پر تحقیقات کا مطالبہ کیا۔ مہدی کا مزید کہنا تھا کہ عمران خان نےاپنی بایو گرافی میں بھی متعدد مقامات پر میچ فکسنگ کا اعتراف کیا ہے جس سے تحقیقات میں مدد مل سکتی ہے۔ عمران خان کے وکیل نے ماضی میں کہا ہے کہ عمران خان نے آسٹریلیا اور انگلینڈ میں کرکٹ کھیل کر اپنی پراپرٹی کے لیے رقم حاصل کی ہے۔مہدی نے دعوی کیا کہ پی ٹی آئی کے بر عکس ن لیگ نے ہمیشہ عدلیہ کا احترام کیا ہے اور اپنے آپ کو ہمیشہ احتساب کےلیے پیش کیا ہے۔ مشرف دور میں بھی ن لیگ کو بہت مشکل احتساب کے دور سے گزرنا پڑا۔ اس وقت بھی نواز شریف کو بے گناہ قرار دیا گیا تھا اور اس بار بھی ایسا ہی فیصلہ آئے گا۔ مہدی نے کہا کہ چالیں چلنے والے لوگ عدلیہ اور حکومت میں پھوٹ ڈلوانے کی کوشش میں لگے ہیں جب کہ تاریخ گواہ ہے کہ ن لیگ نے ہمیشہ عدلیہ اور قانون کا احترام کیا ہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *