سندھ اسمبلی آج ایسا بل پیش کرنے جا رہی ہے کہ آپ دنگ رہ جائیں گے!

Image result for ‫سندھ اسمبلی‬‎

سندھ میں نیب آرڈیننس 1999 کے اطلاق کو ختم کرنے کا بل آج اسمبلی میں پیش کیے جانے کا امکان ہے۔ محکمہ قانون کی جانب سے تیار کردہ بل کے مسودے کے مطابق اس کی منظوری کے بعد تمام تحقیقات صوبائی اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ کو منتقل ہو جائیں گی جبکہ نیب عدالتوں میں زیر سماعت مقدمات صوبائی اینٹی کرپشن کورٹ میں منتقل ہوجائیں گے۔

پیپلز پارٹی نے تمام ارکان اسمبلی کو آج اجلاس میں شرکت یقینی بنانے کی ہدایت کی ہے ۔

سندھ اسمبلی میں آج ایک ایسا بل پیش کیا جائے گا جس کے منظوری کے بعد نیب سندھ حکومت یا اس کے ذیلی اداروں میں کرپشن سے متعلق کسی معاملے میں تحقیقات نہیں کر سکے گی بلکہ یہ کام صوبائی محکمہ اینٹی کرپشن کرے گا۔ بل کا نام نیشنل اکاوئنٹیبلیٹی آرڈیننس 1999 سندھ ریپیل ایکٹ 2017 رکھا گیا ہے۔ محکمہ قانون کی جانب سے تیار کیے گئے مجوزہ بل کے مسودے کے مطابق اس کا اطلاق پورے سندھ پر فوری طور پر ہو گا۔

بل کی منظوری کے بعد نیب میں سندھ کے صوبائی محکموں میں کرپشن سے متعلق چلنے والی تمام تحقیقات کا ریکارڈ صوبائی اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ کو منتقل ہو جائے گا۔ بل کے متن کے مطابق منظوری کے بعد احتساب عدالتوں میں چلنے والے صوبائی محکموں سے متعلق تمام مقدمات صوبائی اینٹی کرپشن عدالتوں کو منتقل کر دئیے جائیں گے۔ مجوزہ بل کے مطابق اعلیٰ عدالتوں میں نیب مقدمات کو چیلنج کرنے سے متعلق اپیلوں کی سماعت جاری رہیں گی اور اس میں نیب کے پراسیکیوٹرز کے بجائے ایڈووکیٹ جنرل آفس ڈیل کرے گا۔

پیپلز پارٹی کی قیادت کی جانب سے پارٹی کے تمام ارکان سندھ اسمبلی کو آج کے اجلاس میں شرکت کو یقینی بنانے کی ہدایت دی گئی ہے :-

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *