قاسمی صاحب! مسکرا دیا کریں

منورحسین

جب قاسمی صاحب نے پی ٹی وی کے چیئرمین کا عہدہ معاہدے کی مدت پوری ھونے سے ایک سال پہلے ھی چھوڑ دیا تنخواہ تمام سہولیات کو خود ٹھکرا دیا تو اس کے بعد ان کی کردار کشی کی مہم شروع ھوی جب تک عہدے پر موجود تھے کوئی سکینڈل سامنے نھی ایا صرف واہ واہ تھی شاید ایک جرم تو اس عہدے کو اپنے ضمیر اصولوں اور اثبات زات کی خاطر لات مارنا بھی تھا اب ان کے دوست پیار کرنیوالے جاننے والے اس ایشو پر جذباتی ھو جاتے ھین اور اس بات کی صفائی وضاحت دینے کی کوشش بھی کرتے ہیں تا کہ لوگوں کی غلط فہمی دور ھو جائے میرا، موقف بالکل الگ ہے، میں سمجھتا ھوں قاسمی صاحب پر تنقید کرنیوالے ان کے مقام سے بخوبی واقف ہیں ان کے کردار اور جتنا کام انہوں نے زندگی میں کیا سارے کام سے نہیں تو کچھ سے واقف ضرور ہیں ورنہ پاکستان میں انگوٹھا چھاپ وزیر رھے ہیں کبھی کسی کے پیٹ میں مروڑ نھی اٹھا، اینکر پیراشوٹ سے چینلز پر آئے ہیں،  کروڑوں تنخواہ لے رھے ہیں، کسی کو تکلیف نھی پھر قاسمی صاحب ہی ٹارگٹ کیوں- قاسمی صاحب ووٹ کی طاقت ،جمہور کی طاقت پارلیمان کی طاقت کو پروموٹ کرتے ھین مشرف کے خلاف سب سے پہلا کالم قاسمی صاحب کا چھپا تھا جس کو شک ھو ریکارڈ اٹھا کر دیکھ لے پھر جو لوگ لاعملی میں مارشل لا سے امیدیں لگا لیتے تھے قاسمی صاحب نے اپنی تحریروں کالموں سے (جیسے مہر دین مالشیا اور بہت سے کالم ) ان لوگوں کا شعور بیدار کیا کہ بیمار ھوے جس کے سبب اسی عطار کے لونڈے سے دوا مت لیں ۔۔۔۔۔مارشل لا مسائل کا حل نہیں بلکہ وجہ ہے -اب جتنے بھی سیاسی یا غیر سیاسی لوگ ایسے تھے جو ووٹ کےذریعے حکومت میں نھی آ سکتے تھے وہ قاسمی صاحب کے خلاف ھو گئے- پتہ ان کو یہ بھی نھی تھا کہ اور کون سا طریقہ ھے جس سے وہ اقتدار میں آ سکتے ہیں- اس کو ان کی معصومیت کہہ لیں یا جہالت -
دوسرا طبقہ وہ تھا جس میں عطا صاحب کی کمیونٹی کے لوگ تھے مطلب شاعر ادیب دانشور وغیرہ -آپ نے سن رکھا ھو گا کہ دوست فیل ھو جائے تو دکھ ھوتا ھے فرسٹ آ جائے تو زیادہ دکھ ھوتا ھے اب اس اتنی سی بات سے ھی جو لوگ اس طبقے میں سے مخالفت کر رھے ہیں ان کی مخالفت کی وجہ سمجھنا مشکل نھی زیادہ تر یہی دو طبقات کے لوگ ہیں اور میرے خیال میں ان دونوں کمیونٹی کے لوگوں کو سمجھانا یا وضاحت دینا فضول ھے یہ پڑھے لکھےناکام جاہل ہیں- ایک وہ جن کے بارے میں کہا جاتا ھے کہ سارا پنڈ بھی مر جائے توں چودھری نئیں بننا۔۔۔۔ دوسرے جو یہ کہتے ہیں کہ ادب میں ھمیں ھمارا اصل مقام نھی ملا ۔۔۔۔بھائی عطا صاحب نے آپکی شاعری چوری کروا لی تھی لکھی ھوی کتاب پر سیاھی گرا دی تھی ؟جب آپ کوئی ادبی فن پارہ سوچ رھے تھے دو گھونٹ لگا کے آپ کا تخیل عروج پر تھا تو کیا عطا صاحب نے کہاتھا کہ اجی سنتے ھو کبھی کوئی گھر کا کام بھی ڈھنگ سے کرلیا کرو-
عطا صاحب کو تو تین ڈاکٹر سگریٹ سے روکتے روکتے خود خالقِ حقیقی سے جا ملے مجال ھے جو انہوں نے ان کی بات پر کان دھرا ھو ویسے بھی کہتے ہیں سگریٹ پینے والا کبھی مطلبی نھی ھوتا، جس کو اپنی صحت کی پرواہ نھی وہ باقی باتوں کو کہاں لکھے گا ایک مشہور امریکی لیڈر سے کسی نے پوچھا جب کوئی آپ پر تنقید کرتا ھے تو آپ کیا کرتے ہیں،  اس نے کہا میں صرف مسکرا دیتا ھوں۔۔۔۔ قاسمی صاحب اپ بھی صرف مسکرا دیا کریں ۔۔۔۔کاواں دے کہے شیر نئیں مر دے۔۔۔۔۔!!!!

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *