بیلٹ پیپر کی چھپائی اور ترسیل مکمل، الیکشن کمیشن نے ووٹنگ کا طریقہ وضع کردیا

اسلام آباد: عام انتخابات کے لیے بیلٹ پیپرز کی چھپائی اور ترسیل کا کام مکمل ہوگیا جب کہ الیکشن کمیشن نے عام انتخابات میں ووٹنگ کا طریقہ کار وضع کردیا۔

الیکشن کمیشن کے مطابق عام انتخابات 2018 کے سلسلے میں بیلٹ پیپرز کی چھپائی کا کام مکمل کرلیا گیا ہے، عام انتخابات کے لیے 22کروڑ بیلٹ پیپرز چھاپے گئے ہیں اور پہلی بار سیکیورٹی فیچرز پر مبنی بیلٹ پیپرز چھاپے گئے ہیں۔

عام انتخابات کیلئے 22 کروڑ بیلٹ پیپرز چھاپے گئے

الیکشن کمیشن کے مطابق خیبرپختونخوا اور فاٹا کے لیے 3 کروڑ سے زائد بیلٹ پیپرز پرنٹنگ کارپوریشن اسلام آباد میں چھاپے گئے، بلوچستان سندھ، بہاولپور، ملتان، ڈیرہ غازی خان، سرگودھا اور ساہیوال ڈویژنز کے لیے بیلٹ پیپرز کراچی میں چھاپے گئے جن کی تعداد 10 کروڑ سے زائد تھی۔

الیکشن کمیشن نےبتایا کہ اسلام آباد، راولپنڈی، لاہور فیصل آباد اور گوجرانوالہ کے لیے بیلٹ پیپرز اسلام آباد میں چھاپے گئے جن کی تعداد 7 کروڑ سے زائد تھی۔

الیکشن کمیشن کاکہنا ہےکہ ماسوائے کراچی کے چاروں صوبوں میں بیلٹ پیپرز کی ترسیل مکمل کرلی گئی ہے جب کہ کراچی میں بھی آج ترسیل مکمل کرلی جائے گی۔

ووٹنگ کا طریقہ کار وضع

الیکشن کمیشن کے مطابق عام انتخابات میں قومی اسمبلی کے بیلٹ پیپر کا رنگ سبز اور صوبائی اسمبلیوں کے لیے بیلٹ پیپر کا رنگ سفید ہوگا۔

قومی اسمبلی کے بیلٹ پیپر کا رنگ سبز اور صوبائی اسمبلیوں کے لیے بیلٹ پیپر کا رنگ سفید ہوگا

الیکشن کمیشن کے وضع کردہ طریقہ کار میں بتایا گیا ہےکہ ‎پہلے مرحلے میں پولنگ افسر ووٹر کا اصل قومی شناختی کارڈ چیک کرے گا، پولنگ افسرشناختی کارڈ کی چیکنگ کے بعد ووٹرلسٹ میں درج نام چیک کرے گا اور ووٹر کا نام اور سلسلہ نمبر پولنگ ایجنٹس کے لیے بلند آواز میں پکارا جائےگا۔

الیکشن کمیش کے مطابق ووٹر کا سیدھی لکیر دے کر لسٹ سے نام کاٹ دیا جائے گا جس کےبعد کاؤنٹر فائلر پر ووٹر کے انگوٹھے کا نشان لیا جائے گا، پھر انگوٹھے کے ناخن کے جوڑ پر ان مٹ سیاہی کا نشان لگایا جائے گا۔

الیکشن کمیشن کے مطابق قومی و صوبائی اسمبلی کے لیے اسسٹنٹ پریزائیڈنگ افسر بیلٹ پیپر کی پشت پر دستخطے کرے گا، دستخط لینے کے بعد ووٹر کو سبز رنگ اور سفید بیلیٹ پیپر جاری کیا جائے گا اور ووٹر ووٹنگ اسکرین کے پیچھے جا کر اپنے پسندیدہ امیدوار کے انتخابی نشان پر مہر لگائے گا۔

سبز بیلٹ پیپر سبز ڈھکن والے باکس سفید بیلٹ پیپر سفید ڈھکن والے باکس میں ڈالا جائے گا

الیکشن کمیشن نےبتایا کہ قومی اسمبلی کا سبز بیلٹ پیپر سبز ڈھکن والے جب کہ صوبائی اسمبلی کا سفید بیلٹ پیپر سفید ڈھکن والے باکس میں ڈالا جائے گا۔

الیکشن کمیشن کے مطابق پولنگ کا عمل 25 جولائی کو صبح 8 بجے شروع ہوگا اور شام 6 بجے ختم ہوگا، پولنگ کا وقت ختم ہونے کے بعد پولنگ اسٹیشن کا دروازہ بند کر دیا جائے گا اور وقت ختم ہونے پر پولنگ اسٹیشن کے اندر موجود ووٹرز کو ووٹ ڈالنے کی اجازت ہوگی۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *