دھاندلی ایسے ہوئی

عثمان غازی

جھنگ این اے 114 میں پاکستان پیپلزپارٹی کے مخدوم فیصل حیات کو ہرانے کے لیے ایک انوکھا کھیل ہوا مخدوم فیصل صالح حیات 26 جولائی کی شام تک جیت رہے تھے، اچانک انہیں 589 ووٹوں سے ہرادیا گیا اور پی ٹی آئی کے محبوب سلطان کو کامیاب کرادیا گیا مخدوم فیصل صالح حیات فوراً ریٹرننگ افسر شیخ اعجاز علی کے پاس پہنچے جو جھنگ کے سیشن جج بھی ہیں انہوں نے اپنے حلقے میں دوبارہ گنتی کی درخواست دی جو آراو نے فورا منظور کرتے ہوئے حکم دیا کہ پہلے 10 پولنگ اسٹیشن کھلیں گے، ان پولنگ اسٹیشن میں اگر نتائج میں ردوبدل ہوا تو 25، 25 پولنگ اسٹیشن کھولے جائیں گے جیسے ہی پہلے 10 پولنگ اسٹیشن کھلے، پی ٹی آئی کی لیڈ 589 سے کم ہوکر 505 ووٹوں پر آگئی اور پی پی کے 84 ووٹ بڑھ گئے مخدوم فیصل صالح حیات فوراً آر او کے پاس اس کے آرڈر کے مطابق مزید پولنگ اسٹیشن کھلوانے گئے تو اس نے نہ صرف اپنے ہی حکم پر عمل درآمد سے انکار کرتے ہوئے ایک نئی عدالتی تاریخ رقم کی بلکہ حتمی نتیجہ 15 منٹ کے اندر الیکشن کمیشن کو بھیج دیا تاکہ پی پی امیدوار الیکشن کمیشن کو ری کاؤنٹنگ کی درخواست بھی نہ دے سکے مخدوم فیصل صالح حیات اسلام آباد ہائی کورٹ پہنچے، جہاں آج عدالت نے الیکشن کمیشن حکام کو تین اگست کو طلب کرلیا ہے پی پی امیدوار کی بس اتنی سی درخواست ہے کہ دوبارہ گنتی کی جائے، شکست کی صورت میں وہ اپنی ہار تسلیم کریں گے، دوبارہ گنتی کسی غیرجانب دار ریٹرننگ افسر سے کرائی جائے تو صاحبو! یہ ہیں وہ زمینی حقائق کہ کیسے پی ٹی آئی کو جتوانے کے لیے پورے ملک میں پاکستان پیپلزپارٹی کے مینڈیٹ پر ڈاکا مارا گیا

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *