شفقت حسین کی پھانسی پر عملدرآمد ایک بار پھر مؤخر

Shafqat-hussain-watermarkاسلام آباد ہائیکورٹ نے قتل کے جرم میں سزائے موت پانے والے شفقت حسین کی پھانسی پر عملدرآمد ایک روز کیلئے روکتے ہوئے فریقین کے وکلاء کو کل تک دلائل مکمل کرنے کی ہدایت کر دی۔

جسٹس اطہر من اللہ نے شفقت حسین کی عمر کے تعین سے متعلق درخواست پر سماعت کی، عدالت کا کہنا تھا کہ عدالت عظمٰی کے فیصلہ کے بعد وزارت داخلہ کی شفقت کی عمر کے حوالے سے انکوائری کی کوئی حیثیت نہیں، وزارت داخلہ انکوائری کرنے کی مجاز نہیں تھی ۔ ایگزیکٹو کی طرف سے عمر کے تعین کیلئے بنایا گیا ، کمیشن بادی النظر میں غیر قانونی ہے ۔ جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس دیئے کہ شفقت حسین کو پھانسی دیئے جانے کے بعد یہ ثابت ہوتا کہ جرم کے ارتکاب کے وقت وہ نابالغ تھا تو اس صورت میں صدر پاکستان اور عدالتوں کیلئے اس پھانسی کا جواز کیا ہوگا ۔ عدالت عالیہ نے عبوری حکم نامے کے ذریعے شفقت حسین کی پھانسی پر عملدرآمد ایک روز کے لیے روکتے ہوئے فریقین کے وکلاء کو کل تک دلائل مکمل کرنے کی ہدایت کر دی ، کیس کی سماعت کل دوبارہ ہوگی۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *