افریقی امریکنوں کی موجودہ اور اگلی نسلیں ،سب نسل پرستی کا سامنا کریں گی: مشعل اوباما

 US-ENTERTAINMENT-BOUNTIFUL-OBAMAالابما: امریکی خاتون اول، مشعل اوباما نے ٹسکی جی یونیورسٹی میں 2015ء کی افتتاحی تقریب میں موجود گریجوایٹس اور ان کے خاندانوں کے ہجوم سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ وہ جماعتیں جو 2015ء میں اپنی گریجوایشن مکمل کر رہی ہیں، اور افریقی امریکنوں کی وہ اگلی نسلیں جو آئندہ گریجوایٹ ہوں گی، وہ سب نسل پرستی کا سامنا کریں گی کیونکہ:
’’کیونکہ مسئلہ موجود ہے۔۔آگے موجود راستہ آسان نہیں ہو گا۔یہ کبھی آسان نہیں ہوتا، بالخصوص آپ اور مجھ جیسے لوگوں کیلئے۔اس لئے کہ جب ہم اتنا آگے آ گئے ہیں تو سچ یہ ہے کہ یہ صدیوں پرانے مسائل، بڑے ضدی اور سر پھرے ہیں اور وہ ابھی مکمل طور پر ختم نہیں ہوئے ہیں۔۔۔ اور یہ سارا بوجھ بہت بھاری ہوجائے گا۔آپ خود کو تنہاء ہوتا ہوا محسوس کر سکتے ہیں۔یہ مسئلہ آپ کو، کسی نہ کسی طرح، یہ سوچنے پر مجبور کر سکتا ہے کہ آپ کی زندگی کوئی اہمیت نہیں رکھتی۔۔۔ اور جیسا کہ گزشتہ چند سالوں کے دوران، ہم دیکھ چکے ہیں کہ ۔۔۔ یہ احساسات حقیقی ہیں۔ ان مسائل کی جڑیں ساختی چیلنجز کے حامل کئی عشروں میں پیوست ہیں جنہوں نے بہت سے لوگوں کو مایوس اور منظر سے غائب کر دیا ہے۔ اور یہ احساسات بالٹی مور اور فرگوسن اور امریکہ بھر میں موجود کئی دوسرے علاقوں میں سرایت کر گئے ہیں۔‘‘
’’اوراگر آپ خود کواس شور اور دباؤ سے بلند ترکر لیں، جو آپ کا احاطہ کئے ہوئے ہے، اگر آپ اپنی ذات اور اپنے اصل وطن کے ساتھ مخلص رہیں، اگر آپ خدا کے اس منصوبے پر یقین رکھتے ہیں، جو وہ آپ کیلئے بنائے ہوئے ہے تو پھر آپ ملک بھر میں موجودلوگوں سے متعلق اپنے فرائض پورے کرتے رہیں گے۔۔۔ آپ ناہموار مقامات کو ملائم ہوتا ہوا محسوس کریں گے۔آپ ترقی کے اس ’کبھی ناکام نہ ہونے والے معجزے میں حصہ لیں گے۔اور آپ، اس دنیا سے باہر۔۔۔ آزادفضاء میں اڑرہے ہوں گے۔‘‘

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *