اٹلی میں واقع 8 ہزار لاشوں اور ڈھانچوں کا میوزیم

اٹلی: اٹلی میں سِسلی کے علاقے میں ایک میوزیم نما قبرستان واقع ہے جو کم ازکم 400 سال پرانا ہے۔ سب سے پہلے 1599 میں پادریوں نے ایک بڑے پروہت ’سلویسٹرو آف گیوبیو‘ کی لاش کو محفوظ کیا تھا  اور اسے زیرِ زمین تہہ خانے جیسے کمرے میں رکھ دیا تھا۔

اس میوزیم کو پالمرو کیپیوچِن کا نام دیا گیا ہے جہاں اب ممی اور مردوں کی تعداد ہزاروں میں پہنچ چکی ہے۔

1600 سے لے کر 1920 تک یہاں لاشوں کو لایا جاتا رہا لیکن اب یہ سلسلہ موقوف ہوچکا ہے۔ یہاں موجود پادریوں اور دیگر عملے کی جانب سے قبرستانی میوزیم کی تصاویر لینے کی سخت پابندی تھی۔ اسی وجہ یہ دلچسپ جگہ منظرِ عام پر نہ آسکی۔

یہاں پر لاشوں کے گلنے سڑنے کے مختلف مراحل کو اپنی آنکھوں سے دیکھا جاسکتا ہے اور اسی بنا پر اسے انسانی جسمانی انحطاط کی قدرتی تجربہ گاہ بھی کہا جاسکتا ہے۔ بعض لاشوں پر جلد کے پرتیں، بال اور ناخن موجود ہیں تو بعض لاشوں کے صرف ڈھانچے ہیں دکھائی دے رہے ہیں جن پر دیگر کسی شے کےکوئی آثار نہیں۔ جبکہ کئی لاشیں ٹوٹ پھوٹ کی بھی شکار ہیں۔

یہاں موجود ایک لاش کو خوبصورت لباس اور ہیٹ پہنایا گیا ہے اور اس کے طویل بال بھی دیکھے جاسکتے ہیں۔ ایک اور معصوم بچے کی لاش بھی یہاں موجود ہے جس کے سر پر سنہری پٹی بندھی ہوئی ہے۔ اگرچہ 1880 میں اس قبرستان نما جگہ کو بند کردیا گیا تھا لیکن کسی طرح 1920 تک یہاں لاشوں کے جمع ہونے کا سلسلہ جاری رہا۔

اس میوزیم کی دیواریں افقی اور عمودی اب لاشوں سے اٹی پڑی ہیں۔ لیکن یہاں دفن ہونے کےلیے مرنے سے پہلے درخواست دینی ہوتی ہے اور بسا اوقات مرنے والے کے اہلِ خانہ کو بھی اس کی خطیر رقم عطا کرنا ہوتی ہے۔

اس میوزیم میں لاشوں کی مجموعی تعداد 8000 سے زائد ہے اور ممی کی تعداد 1200 کے قریب ہے جبکہ یہاں موجود عملہ لاشوں کی دیکھ بھال کرتا ہے۔ تاہم یہ معلوم نہ ہوسکا کہ یہاں عام شائقین بھی آسکتے ہیں یا نہیں۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *