طالبان سے ابتدائی مذاکرات کامیاب رہے: افغان حکومت

hikmar khalilافغانستان کی حکومت نے طالبان کے ساتھ پہلے باضابطہ مذاکرات کو کامیاب قرار دیا ہے جس میں دونوں جانب سے قیامِ امن کی خواہش کا اظہار کیا گیا ہے۔ یہ بات پاکستان کے سیاحتی مقام مری میں مذاکرات میں شرکت کے بعد دارالحکومت کابل پہنچنے پر افغانستان کے نائب وزیر خارجہ حکمت کرزئی نے کہی۔ ان کا کہنا تھا کہ پچھلے اور ان مذاکرات میں جو اہم فرق تھا وہ تھا دونوں جانب کی ٹیموں کا سرکاری ہونا۔ افغانستان کے نائب وزیر خارجہ نے کہا کہ وہ اس بات پر قائل ہیں کہ جس ٹیم سے مذاکرات کیے گئے ہیں وہ طالبان راہنماو¿ں کی طرف سے بھیجے گئے نمائندے تھے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ اس بھی زیادہ اہم بات یہ کہ لگتا تھا کہ یہ ٹیم حقانی نیٹ ورک کی بھی نمائندگی کر رہی تھی جو طالبان کی اتحادی تنظیم ہے۔ دوسری جانب برطانوی خبر رساں ایجنسی روئٹرز کے مطابق افغان حکومت کے وفد کے ایک رکن نے کہا کہ طالبان نے مذاکرات کے پہلے دور میں افغانستان میں غیر ملکی فوجوں کا ہونا، اقوام متحدہ کی پابندیوں اور جنگی قیدیوں کے بارے میں بات کی۔ پاکستان میں ہونے والے مذاکرات میں امریکہ اور چین کے اراکین کو باضابطہ طور پر مبصر کا درجہ حاصل تھا۔ افغانستان کی مذاکراتی ٹیم کے ایک رکن نے کہا کہ مذاکرات کا اگلا دور عید کے بعد ہو گا اور ممکنہ طور پر چین میں ہو گا۔ واضح رہے کہ بدھ کو مذاکرات کے حوالے سے افغان طالبان نے ایک بیان جاری کیا تھا جس میں کہا گیا تھا کہ ان کی تنظیم اپنی پالیسیوں میں وقت کے ساتھ ساتھ تبدیلیاں لائی ہے۔ اس سے قبل اسلام آباد میں وزارت خارجہ کی جانب سے جاری ایک بیان میں بتایا گیا کہ ملاقات میں مذاکرات جاری رکھنے اور فریقین کے درمیان اعتماد سازی کی ضرورت پر زور دیا گیا۔ سرکاری بیان میں امید ظاہر کی گئی کہ فریقین مذاکرات کو سنجیدگی اور خلوص نیت سے آگے لے کر جائیں گے۔ ان اطلاعات کو بظاہر رد کرتے ہوئے کہ مذاکرات میں طالبان کے نمائندوں کو ان کی قیادت کی حمایت حاصل نہیں، وزارت خارجہ کا کہنا تھا کہ شرکا کو ان کی قیادتوں کا مینڈیٹ حاصل تھا جنھوں نے افغانستان اور اس خطے میں قیام امن کی خواہش کا اظہار کیا ہے۔ ذرائع کے مطابق فریقین نے ان رابطوں کے بارے میں مذاکرات کے مخالفین کی جانب سے کسی منفی پروپیگنڈے سے متاثر ہوئے بغیر انھیں جاری رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ترجمان کے مطابق آئندہ اجلاس فریقین کے باہمی اتفاق رائے سے رمضان کے بعد کسی تاریخ کو ہو گا۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *