لیکن الیکشن منصفانہ تھے۔ ۔ ۔

asif Mehmoodبارہ لاکھ ایکسٹرا بیلٹ پیپرز چھاپے گئے،یہ بیلٹ پیپرز ایک سو انچاس حلقوں میں بھیجے گئے،چھ ہزار آٹھ سو دو پولنگ بیگ کھلے ہوئے پائے گئے،چھ سو ستاسی پولنگ بیگ گم ہو گئے،بیس ہزار فارم پندرہ غائب کر دیے گئے،انگوٹھوں کی تصدیق نہیں ہو سکی،آر اوز اور پریذائڈنگ آفیسرز دباﺅ کا شکار تھے، بہت ساری بے ضابطگیاں بھی ہوئیں.... لیکن اللہ کا لاکھ لاکھ شکر ہے ” منظم دھاندلی“ ثابت نہیں ہوئی اور سب کچھ آزادانہ منصفانہ اور قانون کے مطابق ہوا۔

اے عزیز ہم وطنو!
جب بھی چوری، ڈکیتی کو جی چاہے یا کسی کی عصمت دری کرنا ہو ، براہِ کرم” غیر منظم “طریقے سے کیجیے۔ایسا کرنے سے سب کچھ آزادانہ، منصفانہ اور قانون کے مطابق قرار پائے گا، اور سربراہ حکومت گرہ لگائیں گے: ماضی کو بھلا کر آگے بڑھیے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *