عدنان سمیع خان کو بھارت میں غیر معینہ مدت تک قیام کی اجازت مل گئی

jamaliatمعروف گلوکارعدنان سمیع خان کو’’انسانی ہمدردی کی بنیاد‘‘ پر غیر معینہ مدت تک ہندوستان میں رہنے کی اجازت مل گئی ہے۔ آئی بی این لائیو کی ایک رپورٹ کے مطابق منسٹر آف اسٹیٹ برائے داخلہ کرن ریجیجو نے منگل کو بھارتی لوک سبھا کو بتایا کہ عدنان سمیع خان کو غیر ملکیوں کے قانون برائے 1946 کے سیکشن 3 کے تحت ملک سے بے دخلی سے مستثنیٰ قرار دے دیا گیا ہے۔ واضح رہے کہ 46 سالہ عدنان سمیع خان نے رواں برس 26 مئی کو انڈین وزارت داخلہ میں انسانی ہمدردی کی بنیادوں پر انڈیا میں قیام کی درخواست کی تھی۔ وزارت داخلہ کی جانب سے جاری کیے گئے حکم نامے کے مطابق غیر ملکیوں کے قانون برائے 1946 کے سیکشن 3A کے تحت عدنان سمیع خان ولد ارشد سمیع خان (مرحوم) کو ڈی پورٹیشن کے عمل سے استثنیٰ دے دیا گیا ہے اور یہ حکم اْس وقت تک نافذ رہے گا جب تک اس حوالے سے دوسرے احکامات جاری نہ کیے جائیں۔ 1969 میں لندن میں پیدا ہونے والے عدنان سمیع پاکستانی سفارت کار ارشد سمیع اور ہندوستانی نژاد نورین خان کے بیٹے ہیں۔ عدنان 13 مارچ 2001 کو ایک سالہ ویزے کے ساتھ انڈیا آئے اور بعد ازاں وقتاً فوقتاً اپنے ویزے کی مدت بڑھاتے رہے۔ 27 مئی 2010 کو جاری کیے گئے ان کے پاکستانی پاسپورٹ کی مدت 26 مئی 2015 کو ختم ہوگئی جسے حکومت پاکستان کی جانب سے از سر نو جاری نہیں کیا گیا، جس کے بعد انھوں نے انڈین حکومت سے انڈیا میں اپنے قیام کو انسانی ہمدردی کی بنیاد پر قانونی قرار دینے کی درخواست کی۔ عدنان سمیع خان متعدد مشہور گانوں کے تخلیق کار ہیں۔ حال ہی میں ریلیز ہونے والی فلم ’’بجرنگی بھائی جان‘‘ کے لیے عدنان سمیع خان نے ایک قوالی بھی سلمان خان کی فرمائش پر ریکارڈ کروائی تھی۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *