عبدالرشیدغازی قتل کیس،پولیس نے مشرف کو بے گناہ قرار دیدیا

musharaf 2پولیس نے پرویز مشرف کو عبدالرشید غازی قتل کیس میں بے گناہ قرار دے دیا ہے۔ ادھر مذکورہ مقدمہ میں پرویز مشرف کی درخواست ضمانت پر عدالت نے فیصلہ محفوظ کر لیا ہے جو کل سنایا جائے گا۔ تفصیلات کے مطابق پولیس نے عبدالرشید غازی کے کیس میں مشرف کو بے گناہ قرار دیتے ہوئے ان کو خانہ نمبر 2 میں کر دیا ہے۔ پولیس کے مطابق مدعی پرویز مشرف کے خلاف کوئی ثبوت یا چشم دید گواہ پیش نہیں کر سکا۔ پولیس چالان کے مطابق ملزم کے خلاف ٹھوس ثبوت یا گواہ نہ ہونے پر اسے عدالت کی صوابدید پر خانہ نمبر 2میں رکھا گیا ہے۔ دوسری طرف عبدالرشید غازی قتل کیس میں پرویز مشرف کی درخواست ضمانت پر فیصلہ محفوظ کر لیا گیا۔ فیصلہ یکم نومبر کو سنایا جائے گا۔ غازی عبدالرشید قتل کیس میں پرویز مشرف کی درخواست ضمانت کی سماعت ایڈیشنل سیشن جج واجد علی نے کی۔مدعی مقدمہ کے وکیل ایڈووکیٹ طارق اسدنے کہا کہ پولیس نے دوران تفتیش اہم ثبوتوں کو نظرانداز کیا۔ پرویز مشرف لال مسجد آپریشن کا ماسٹر مائنڈ اور مرکزی ملزم ہے جس نے آئین پامال کرکے پوری قوم کو یرغمال بنائے رکھا۔وہ پوری قوم کو مکا دکھاتا رہا۔ وکلاء کی جانب سے درخواست ضمانت پر دلائل مکمل ہونے پر عدالت نے فیصلہ محفوظ کر لیا۔ اس سے قبل غازی عبدالرشید قتل کیس میں پرویز مشرف کے وکیل الیاس صدیقی نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ لال مسجد آپریشن سے قبل اسلام آباد سے لوگوں کو اغوا کیا جا رہا تھا۔ پولیس فائل میں سابق صدر کی جانب سے آپریشن کا کوئی حکم موجود نہیں۔ الیاس صدیقی نے مزید کہا کہ ڈپٹی کمشنر اسلام آباد نے آپریشن کے لئے فوج کو بلایا۔ آپریشن میں آرمی کے 11 اہلکار بھی جاں بحق ہوئے، جن کا مقدمہ بھی درج ہونا چاہئے۔ 6 سال تک سابق صدر کے خلاف کوئی ثبوت نہیں پیش کیا جا سکا۔ مدعی مقدمہ کے و کیل طارق اسد ایڈووکیٹ نے دلائل پیش کرتے ہوئے کہا کہ لال مسجد آپریشن کے لئے فوج کا بلانا درست اقدام نہیں تھا۔ آپریشن کے پہلے روز فوج کی فائرنگ سے 24 بے گناہ طالب علم جاں بحق ہوئے۔ انہوں نے کہا کہ لال مسجد آپریشن کے دوران متعدد لاشوں کو جلا کر ناقابل شناخت بنا دیا گیا۔مدعی مقدمہ کے وکیل ایڈووکیٹ طارق اسد کی جانب سے سپریم کورٹ کے لارجر بنچ کے فیصلے کا حوالہ بھی عدالت میں پیش کیا۔ دوسری جانب غازی عبدالرشید قتل کیس کا ٹرائل علاقہ مجسٹریٹ امان اللہ کی عدالت سے ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج راجہ جواد عباس کی عدالت میں منتقل کر دیا گیا ہے جس پر کل سماعت ہو گی۔ پولیس کی جانب سے چالان عدالت میں پیش کئے جانے کے بعد ٹرائل سیشن کورٹ کو منتقل کیا گیا۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *