ترکی اور یورپی یونین کے مابین احلاق کی شروعات

یورپ میں تارکینِ وطن کی آمد کو کنٹرول کرنے کے لیے ترکی اور TURKY IN euیورپی یونین کے درمیان معاہدہ طے پا گیا ہے۔ترکی مہاجرین کو اپنی سرحدوں میں محدود رکھنے کے بدلے میں تین ارب ڈالر سے زائد رقم اور سیاسی مراعات لےگا۔ترکی کے وزیراعظم احمد داؤد اوغلو برسلز میں یورپی یونین کے حکام کے ساتھ ملاقات میں معاہدہ طے پا جانے کے بعد اپنے بیان میں آج کے دن کو یورپی یونین کے ساتھ تعلقات کا ’تاریخی دن‘ قرار دیا۔خیال رہے کہ رواں برس نو لاکھ پناہ گزین یورپ جا چکے ہیں۔ ان میں سے بیشتر کا تعلق شام، عراق اور افغانستان کے شورش زدہ علاقوں سے ہے اور اپنے سفر کے دوران انھوں نے ترکی میں عارضی طور پر قیام بھی کیا تھا۔ترک وزیرِاعظم نے یورپی یونین کی اٹھائیس اقوام کے بلاک میں شامل ہونے کے عمل اور یورپی رہنمائوں سے ملاقات کو ترکی کے لیے نیا آغاز قرار دیا ہے۔یورپی یونین کا کہنا ہے کہ ترکی میں پناہ گزینوں کی امداد کے لیے ابتدائی طور پر تین بلین یورو دیے جائیں گے جبکہ اگلے سال اکتوبر تک ترکی سے ویزہ پابندی ہٹا لی جائے گی۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *