سٹوکس اور بیئر سٹو کا افریقی باﺅلروں پر لاٹھی چارج

matchکیپ ٹاون میں جاری سیریز کے دوسرے کرکٹ ٹیسٹ میچ میں انگلش آل راونڈر بین سٹوکس کی جارحانہ اننگز کے بعد اب جنوبی افریقہ کو آغاز میں ہی نقصان اٹھانا پڑا ہے۔میچ کے دوسرے دن انگلینڈ کے 629 رنز کے جواب میں میزبان ٹیم نے اب سے کچھ دیر قبل تک ایک وکٹ کے نقصان پر 19 رنز بنا لیے تھے۔آوٹ ہونے والے جنوبی افریقی بلے باز وین زل تھے جو رن آوٹ ہوئے۔اس سے قبل سٹوکس کی ڈبل سنچری اور جونی بیرسٹو کی سنچری کی بدولت انگلینڈ کی ٹیم ایک بڑا سکور کرنے میں کامیاب رہی۔چائے کے وقفے سے کچھ دیر قبل انگلینڈ نے اپنی پہلی اننگز چھ وکٹوں کے نقصان پر 629 رنز بنا کر ڈیکلیئر کر دی۔آل راونڈر بین سٹوکس اور جونی بیرسٹو نے اتوار کو اننگز پانچ وکٹوں کے نقصان پر 317 رنز سے شروع کی اور جارحانہ بلے بازی کرتے ہوئے سکور میں مزید 305 رنز کا اضافہ کر ڈالا۔ان دونوں کے درمیان پانچویں وکٹ کے لیے 399 رنز کی شراکت ہوئی اور انھوں نے فی اوور سات رنز سے زیادہ کی اوسط سے سکور کیا۔اس دوران سٹوکس انگلینڈ کی جانب سے تیز ترین اور ٹیسٹ کرکٹ کی تاریخ کی دوسری تیز ترین ڈبل سنچری بنانے میں کامیاب رہے۔انھوں نے 11 چھکوں اور 30 چوکوں کی مدد سے 198 گیندوں پر 258 رنز کی اننگز کھیلی۔یہ چھٹے نمبر پر بلے بازی کے لیے آنے والے کسی بھی ٹیسٹ کرکٹر کی جانب سے سب سے بڑا سکور بھی ہے۔
سٹوکس کا ساتھ دینے والے جونی بیرسٹو نے 18 چوکوں اور دو چھکوں کی مدد سے 150 رنز بنائے۔ ان کے 150 رنز مکمل ہوتے ہی کپتان کک نے اننگز ختم کرنے کا اعلان کیا۔جنوبی افریقہ کی جانب سے زخمی فاسٹ بولر ڈیل سٹین کی جگہ ٹیم میں شامل ہونے والے نوجوان فاسٹ بولر کاغیزو ربادا نے تین جبکہ مورس اور مورکل نے ایک ایک کھلاڑی کو آو¿ٹ کیا جبکہ ایک کھلاڑی رن آوٹ ہوا۔
کیپ ٹاو¿ن ٹیسٹ میں انگلینڈ کی جانب سے فاسٹ بولر جیمز اینڈرسن کی ٹیم میں واپسی ہوئی ہے، وہ ڈربن میں کھیلا گیا پہلا ٹیسٹ میچ انجری کے باعث نہیں کھیل پائے تھے۔خیال رہے کہ چار ٹیسٹ میچوں کی سیریز میں انگلینڈ کو ایک صفر کی برتری حاصل ہے۔اس سے قبل ڈربن میں کھیلے گئے پہلے ٹیسٹ میچ میں انگلینڈ کے جنوبی افریقہ کو 241 رنز سے شکست دی تھی۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *