خواجہ آصف کی سینیٹ اجلاس میں شرکت پر پابندی

پاکستان کے سینیٹ کے چیئkhawaja asifرمین رضا ربانی نے وفاقی وزیرِ دفاع خواجہ آصف کی سینیٹ اجلاس میں عدم حاضری پر رواں اجلاس میں ان کی شرکت پر پابندی عائد کر دی ہے۔پاکستان کی پارلیمانی تاریخ میں یہ پہلا موقع ہے کہ سینیٹ کے چیئرمین یا قومی اسمبلی کے سپیکر نے عدم حاضری کی بنا پر کسی وفاقی وزیر پر ایوان کے اجلاس میں شرکت کرنے پر پابندی عائد کی ہے۔سینیٹ سیکریٹیریٹ کی جانب سے جمعرات کو جاری ہونے والے شیڈیول کے مطابق وفاقی وزیر دفاع خواجہ محمد آصف کو آرمی چیف جنرل راحیل شریف کے دورۂ افغانستان کے بارے میں بحث کو سمیٹنا تھا۔جمعرات کو جب سینیٹ کا اجلاس شروع ہوا تو اس وقت قومی اسمبلی کے اجلاس میں پی آئی اے کی نجکاری کا بل پیش ہو رہا تھا جس کی وجہ سے اس معاملے پر سینیٹ کی کارروائی کچھ دیر کے لیے موخر کر دی گئی۔وفاقی وزیر دفاع خواجہ آصف سینیٹ کے اجلاس میں شریک ہوئے اور واقفۂ سوالات کے بعد ایوان سے چلے گئے جس کے بعد وہ واپس نہیں آئے۔پانی و بجلی کے وزیر مملکت عابد شیر علی نے ایوان میں کھڑے ہو کر کہا کہ اُنھیں خواجہ آصف نے کہا ہے کہ وہ ایوان سے رائے لے لیں اور وہ اس بارے میں تحریری طور پر ایوان کو آگاہ کر دیں گے۔

سینیٹ چیئرمین نے اس پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ایک وفاقی وزیر کا یہ رویہ کسی طور پر بھی قابل قبول نہیں ہے جس کے بعد اُنھوں نے خواجہ آصف کے رواں اجلاس میں شریک نہ ہونے کی رولنگ دی۔آرمی چیف جنرل راحیل شریف کے دورۂ افغانستان کا معاملہ سینیٹ میں 29 دسمبر کو اُٹھایا گیا تھا جس کے بعد وزیر دفاع نے دو دن کی مہلت مانگی تھی کہ وہ اس عرصے کے دوران متعلقہ حکام سے بریفنگ لیکر ایوان کو آگاہ کریں گے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *