لاہورپولیس کی غنڈہ گردی، نجی سکول پر قبضہ کرنے والے رہا ، ون فائیو پر کال کرنے والی وائس پرنسپل اور سینئر صحافی کی صاحبزادی کےخلاف پرچہ

yamin

(کرائم رپورٹر سے) لاہور میں 15 پر کال کر کے مشکوک اور حملہ آور افراد کی اطلاع کرنا بھی جرم بن گیاہے۔ اس کا ایک ثبوت بلال کالونی ڈھولنوال کے نجی سکول ’’قائد اعظم سکول سسٹم ‘‘کی وائس پرنسپل خاتون کے ساتھ پیش آیا۔ پولیس تھانہ نواں کوٹ نے ملزمان سے رشوت لیکر الٹا 15 پر کال کرنیوالی نجی سکول کی پرنسپل کیخلاف ایف آئی آر کاٹ دی ۔ مدعیہ حافظہ مہرین صدیقی نے سی سی پی او لاہور کو درخواست دیتے ہوئے کہا ہے کہ 13 فروری 2016ء کے روز چند لوگوں نے ان کے سکول پر قبضہ کرنے کی نیت سے بچوں کو اسلحہ کے زور پر جبراً سکول سے نکالنا شروع کر دیا تو انہوں نے 15 پر کال چلا دی جس کے بعد پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے شرپسند افراد کو موقع پر گرفتار کر لیا تاہم بعد ازاں پولیس نے انہیں چھوڑ دیا اور الٹا مدعیہ کے خلاف غلط کال کرنے کا پرچہ درج کرلیا۔ اسی روز رات کے وقت پولیس کے ایما پر قبضہ گروپ مقامی مسجد کے امام مسجد اور طالب علموں کے ساتھ دوبارہ سکول پر حملہ آور ہو ا اور توڑ پھوڑ کی تو ان کے والد معروف صحافی اور صدرپنجاب پریس کونسل ،محمد یامین صدیقی نے 15 پر پولیس کو اطلاع دی۔ پولیس نے قبضہ گروپ کیخلاف کاروائی کرنے کی بجائے ملزمان کو گرفتار کیا اور گھریلو جھگڑے کا نام دے کر مک مکا کے بعد تھانے جاکر چھوڑ دیاجس پر علاقہ کے معززین اور طالب علموں کے والدین نے شدید احتجاج کیا ہے ۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *