فالج اور ہارٹ اٹیک سے بچانے والی غذا

Porridge

دلیہ کا روزانہ استعمال ہارٹ اٹیک اور فالج جیسے امراض کے خطرات صحت کے لیے نقصان دہ کولیسٹرول کی سطح پر قابو پاکر کم کرتا ہے۔ یہ دعویٰ کینیڈا میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آیا۔ ٹورنٹو کے سینٹ مائیکل ہاسپٹل کی تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ جو لوگ دلیہ کھانے کو عادت بنالیتے ہیں ان کے جسم میں نقصان دہ کولیسٹرول کی سطح میں 7 فیصد تک کمی آتی ہے۔ خون میں موجود یہ کولیسٹرول شریانوں کو تنگ کرنے کے ساتھ ساتھ مختلف امراض کا باعث بنتا ہے۔

تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ جو کا دلیہ کولیسٹرول کی سطح کم کرکے ہارٹ اٹیک اور فالج جیسے جان لیوا امراض سے تحفظ دینے میں مددگار ثابت ہوسکتا ہے۔ فائبر (ریشے) سے بھرپور دلیے میں پروٹین کی مقدار دوگنا زیادہ جبکہ کیلوریز بہت کم ہوتی ہیں جس سے جسمانی وزن میں اضافے کا امکان بھی نہیں ہوتا۔ محققین کا کہنا تھا کہ دلیہ میٹابولزم کو بہتر بناکر کھانے کی اشتہا کو کم کرتا ہے جبکہ بلڈ شوگر اور انسولین کی سطح بھی کم ہوتی ہے۔ تحقیق کے مطابق نقصان دہ کولیسٹرول کی سطح کو معمول پر رکھنے سے خون کی شریانوں سے متعلق امراض جیسے ذیابیطس ٹائپ ٹو کا خطرہ بھی کم ہوتا ہے جو آگے بڑھ دیگر امراض کی جڑ ثابت ہوتا ہے۔

تحقیق میں بتایا گیا کہ گزشتہ چند برسوں کے دوران جو کے استعمال کی شرح میں 35 فیصد کمی آئی ہے اور یہ زیادہ تر جانوروں کو کھلا دی جاتی ہے۔ محققین کے مطابق نتائج سے معلوم ہوتا ہے کہ جو مختلف جان لیوا امراض سے تحفظ دینے کے حوالے سے ایک موثر غذا ہے۔ یہ تحقیق طبی جریدے جرنل آف کلینیکل نیوٹریشن میں شائع ہوئی :-

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *