استنبول ٹرمپ ٹاور کے نام سے ٹرمپ کا نام نکالے جانے کا حکم

donald trump1

ترکی کے صدر طیب اردگان نے استنبول میں موجود ٹرمپ ٹاور سے ٹرمپ کا نام ہٹانے کا حکم دیدیا۔ یہ حکم ڈونلڈ ٹرمپ کے اسلام اور مسلمان مخالف رویہ کو دیکھتے ہوئے جاری کیا گیا۔ ترکی اخبارYeni Safak کے مطابق اردگان نے یہ اعلان ایک بزنس فورم TUMSAID میں تقریر کرتے ہوئے کیا۔ ٹرمپ امریکہ میں بسنے والے مسلمانوں کے لیے کوئی نرم گوشہ نہیں رکھتے۔ اور اس بے بُری بات یہ کہ ہم استنبول میں ان کے نام سے ایک ٹاور کھڑا کیے ہوئے ہیں۔ جس نے بھی یہ برانڈ اپنی بلڈنگ پر سجایا ہے اسے چاہیے کہ اسے فورا ہٹا دے۔ اردگان نے تقریر میں کہا۔ استنبول ٹرمپ ٹاور 2012 میں ترکش بلینر آئیدین دوگان نے قائم کیا تھا اور برانڈ کے نام کی وجہ سے وہ ڈونلڈ ٹرمپ کو رقم بھی ادا کرتا ہے۔ البتہ جب ٹرمپ نے پچھلے سال تمام مسلمانوں کو امریکہ آنے سے روکنے کا اعلان کیا تو فرنچائز نے برانڈ نیم کے ساتھ اپنے قانونی معاملات پر دوبارہ غور کرنے کا فیصلہ کیا۔ ٹرمپ شاپنگ مال کے مینیجر Bulent Kurel کا کہنا تھا: ہم ٹرمپ کے بیانات کی مذمت کرتے ہیں۔ ایسے بیانات کی کوئی اوقات نہیں ہے اور یہ ایک ایسے زہن کی اختراع ہیں جو اسلام سے کوئی واقفیت نہیں رکھتا جو کہ ایک پر امن مذہب ہے۔ اردگان نے2012 میں اس شاپنگ مال کی اوپننگ تقریب میں حصہ لیا تھا جب وہ ترکی کے وزیر اعظم تھے لیکن اس جمعہ کے پروگرام میں انہوں نے اپنے اس اقدام پر شرمدنگی کا اظہار کیا۔ ساتھ ہی ترکی کے صدر نے صدر ابامہ کے نقطہ نظر کو سراہا اور کہا کہ اس معاملہ میں اوبامہ مسلمانوں کے ساتھ ہیں۔ اردگان نے یورپی یونین کو اسلاموفوبیا کا شکار قرار دیتے ہوئے کہا کہ یورپی یونین ترکی کو اپنے اتحاد میں شامل نہیں کرنا چاہتا کیوں کہ ترکی کی زیادہ تر آبادی مسلمان ہے۔ آجکل انقرہ یورپی یونین سے ایک ڈیل کی تیاری میں مصروف ہے جس کے مطابق ترک شہریوں کو بغیر ویزا کہ یورپی یونین ممالک میں سفر کرنے کی اجازت ہو گی۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *