دوسرا ریفرنڈم نہیں ہوگا، برطانوی حکومت کا پٹیشن ماننے سے انکار

36

برطانیہ کا یورپی یونین سے نکلنے کا فیصلہ ابھی تک بہت سے عوام کے لیے ناقابل قبول دکھائی دیتا ہے جس کا ثبوت 4.1ملین لوگوں کی طرف سے دوبارہ ریفرنڈم کے لیے دائر کی گئی پٹیشن ہے جو حال ہی میں کیمروں حکومت نے مسترد کر دی ہے ۔ کیمرون کا کہنا ہے کہ اب برطانیہ کے لیے یورپی یونین سے اخراج کا عمل شروع کرنے کا وقت ہے۔ اس سے قبل ایک لاکھ لوگوں کے دستخط والی پٹیشن کو بھی پارلیمنٹ میں قابل غور سمجھا جاتا تھا۔ فارین اور کامن ویلتھ آفیسر نے بتایا ہے کہ یورپی یونین سے علیحدگی کا عمل اب شروع ہو چکا ہے اور اس وقت ایسی کسی پٹیشن کو اہمیت نہیں دی جا سکتی۔پٹیشن کے علاوہ عوام نے ڈاؤننگ سٹریٹ پر مظاہرہ بھی کیا اور دوبارہ ریفرنڈم کا مطالبہ کیا۔یاد رہے کہ یورپی یونین سے علیحدگی کے لیے کئے گئے ریفرنڈم میں 52 فیصد لوگ یورپی یونین سے علیحدگی چاہتے تھے جب کہ 48 نے یورپی یونین کے ساتھ رہنے کے حق میں ووٹ دیا تھا۔ عوام کا کہنا ہے کہ سابقہ ریفرنڈم
کا نتیجہ اتنا قریب ہے کہ دوبارہ ریفرنڈم کی صورت میں یہ نتیجہ بدل سکتا ہے:۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *