برطانیہ کے وہ مشہور ساحل جہاں عورتیں اور مرد کپڑوں سے بے نیاز ہوکر اٹھکیلیاں کرتے ہیں

beach

آجکل برطانیہ کے بہت سے لے گرمی کو ناقابل برداشت پا کر ساحل سمندر کا رخ کرتے ہیں جہاں وہ آزادی سے بے لبا س ہو کر گرمی سے نجات پا سکیں۔ پورے برطانیہ میں لگ بھگ پچاس ایسے ساحل ہیں جہاں لوگ برہنہ ہو کر نہانا اور دھوپ سینکنا پسند کرتے ہیں۔  زیادہ تر ساحل بلکل شہر کے قریب میں واقع ہیں اور لوگ بآسانی ایسے ساحلوں پر لطف اٹھانے وہاں پہنچ سکتے ہیں۔تاہم کچھ ساحل ایسے بھی ہیں جو شہری آبادی سے دور ہیں اور  وہاں لوگوں کی نظروں سے اوجھل رہ کر اپنے جسم کو دھوپ اور پانی سے بھر پور لطف اٹھانے کا اہتمام ہے اس کی مثال ساؤتھ اوسِتھ بیچ ہے جو ایسیکس میں واقع ہے- انگلینڈ کے جنوبی ساحل پر ایسے بہت سے مواقع موجود ہیں۔ کورن وال کا ساحل بھی خوبصورتی کی جنت نظر آتا ہے۔ ڈیون، ڈورسیٹ اور ہمپشائر کے ساحل بھی اس مقصد کے لیے استعمال کیے جاتے ہیں۔ اس کی وجہ شاید یہ ہے کہ جنوبی ساحل بر اعظم کے قریب واقع ہے جہاں عورتیں لباس کے بغیر سستا کر اپنے جسم کو آرام پہنچانا پسند کرتی ہیں۔ جرمنی کے لوگ جو ہر جگہ پر اپنے ننگے پن کے شوق کی وجہ سے پہنچانے جاتے ہیں بھی کئی بار انگلینڈ کا رخ کرتے ہیں۔ سکاٹ لینڈ کے شہری Crakaig Beach  جو سدر لینڈ میں ہے میں اپنی جلد دھوپ میں رکھنے کے متمنی نظر آتے ہیں۔ نیچرسٹس لوگوں کا کہنا ہے کہ کپڑے پہننے یا نہ پہننے کا کوئی قانون نہین ہوتا۔ ہر کسی کو جہاں چاہے بے لباس ہونے کی آزادی ہونی چاہیے۔

beaکچھ لوگوں نے اس حوالے سے لوگوں کو اپنے جسم ڈھانپے رکھنے کا قانون لانے کی حمایت کی ہے۔ اس کے باوجود بلائیٹی میں بہت سے ننگے اکٹھے ہو کر پانی ، ہوا اور دھوپ کا مزہ لیتے ہیں۔ ہر سال تقریبا 300 کے لگ بھگ لوگ سمر سیٹ کےساحلپر ننگے نہانے کی رسم کو پورا کرتے ہیں۔ لوگوں کا موقف  ہے کہ انسانی جسم کو ہر وقت ڈھانپے رکھنا کہاں کا انصاف ہے۔بے لباس ہو کر تفریح کے لیے زیادہ تر شادی شدہ جوڑے بیچ کی طرف نکلتے ہیں -عورتیں بھی اس تفریح کی خاطر اپنے آپ کو بے لباس کرنے میں کوئی ہچکچاہٹ محسوس نہیں کرتیں۔  پورتھ کڈنی بیچ ڈیون پر مصروف دنوں میں 9 شادی شدہ جوڑے، کچھ سنگل عورتیں اور 30 کے لگ بھگ سنگل مرد سرعام برہنہ پھرتے نظر آتے ہیں۔ 

اپنی رائے کا اظہار کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *